Tips & Suggestions

Veterinary and nutritional health utility

Veterinary and nutritional health utility

Veterinary and nutritional health utility

Milk is the first and ancient diet of the human. Additionally, there is a common tradition of breastfeeding cattle, buffalo, goat, and sheep, but most of the Arab countries use milk vessels. Use vitamin milk Being dependent on proponents and vitamins gives energy to the weak children and the elderly.

It contains many important minerals such as potassium, vitamins A, B and B2, such as potassium, zinc, copper, manganese, sodium, and iron.
Nutritionists say that camel is less than lactose and fat cow’s milk. One quart-insulin and cholesterol in a Disney’s litter milk is less than cow’s milk.
Camel milk contains high levels of camel milk than cow.

Vitamin C is three folds and fossils ten times in comparison to cow’s milk in camel milk.
Vitamin C, which is usually found in fruits and vegetables, is also found in camel milk. It vitamin increases and increases in camel milk during the days of drought. Under the vegetables and fruits, The use of camel milk is helpful in completing vitamin C deficiency.
Vitamin C is used to improve the strength of immune. In extreme heat season, vitamin C also saves the sun and the sunlight.
Vitamin C in vitamin milk is up to 23 mg per liter. Due to immune factors in vitamin milk, humans can regularly use their immune system to reach their destiny. While Antimicrobial in the Ontario Milk Elements also are beneficial for the human body.
Apart from the occupation, most cow milk is used in the world. According to the fact that the amount of calcium in milk is more than the amount of coconut milk. The amount of smoking is also very unusual.
Patients with ovarian and osteopaths are relaxed. Veterinary milk contains a certain amount of vitamins, salts, proteins and greasy.
Veterinary milk is also an invaluable donation by the power of diabetes because it contains the amount of insulin that is significantly more than cow’s milk. Insulin is a hormone that makes low amounts of diabetes patients. And they have to take the form of the hormone medicines.Veterinary and nutritional health utility
The use of camel milk in these patients of diabetes is as acne as an ache.
The most important lecture in the nutrient optical ingredients in the uterine milk is very useful for improving the condition of the liver in Ferron Er Qan. Veterinary milk and liver cancer cannot be seen as liver cancer and liver cancer The car are considered useful in arrival. Veterinary milk is found in the proper quantity of lithe line, which is a diet alternative for patients with heart disease, TB in camel milk is equivalent to no breakthrough. When it is found in the milk of cow and buffalo.Veterinary and nutritional health utility

If a camel is used as a nutrient alternative, it can be prevented from this deadly and infectious disease. Veterinary milk is also used as an optimal medicine as a prescription. In some deadly diseases also Use of camel milk has good effects such as cancer, HIV AIDS, Eczema, TB, Parkinson, Heart Diseases, Drops, Blood Reduction, and Hepatitis.
Drinking 500 ml of non-boiled camels daily leaves a good impression on the health of patients with diabetes because insulin contains a lactic protein that is rapidly involved in the human body and does not even lemon.
According to the American research report, in addition to the HEALING PROPERTIES in this milk, the insulin level and its anti-biotech stator run very quickly in the form of human tissues and cells, which means that the camel milk itself I have some features that can lead to immunity against human health and diseases.
Due to the lack of calcium, the bone of the bones that weakened is fed by drinking camel.

دودھ انسان کی سب سے پہلی اور قدیم غذا ہے ۔دنیا بھر میں بچوں کو گائے ،بھینس،بکریوں اور بھڑوں کا دودھ پلانے کا عام رواج ہے لیکن عرب ملکوں میں زیادہ تر اونٹنی کا دودھ استعمال کیا جاتا ہے ۔اونٹنی کا دودھ استعمال کرناسنت نبوی صلی اللہ علیہ وسلم ہے ۔پروٹینز اور وٹامنز سے بھر پور ہونے کی وجہ سے کمزور بچوں اور بڑوں کو توانائی دیتا ہے ۔

اس میں کیلشیم ،وٹامنA,Bاور B2کے علاوہ کئی اہم معدنیات مثلاً پوٹاشیم ،زن ،کاپر ،مینگنیز ،سوڈیم اور آئرن موجود ہوتا ہے ۔
ماہرین غذائیت کہتے ہیں کہ اونٹنی کے دودھ میں لیکٹوز اور چربی گائے کے دودھ کی نسبت کم ہوتی ہے ۔اونٹنی کے ایک لیٹر دودھ میں ایک کوارٹ انسولین اور کولیسٹرول بھی گائے کے دودھ کے مقابلے میں کم ہوتا ہے ۔

اونٹنی کے دودھ میں گائے کی نسبت اونٹنی کے دودھ میں بلند ترین سطح پر ہوتا ہے ۔

اونٹنی کے دودھ میں گائے کے دودھ کے مقابلے میں وٹامن سی تین گنا اور فولاد دس گنازائد ہوتا ہے ۔
وٹامن سی جو عموماً ترش پھلوں اور سبزیوں میں پایا جاتا ہے اس کی بھی خاصی مقدار اونٹنی کے دودھ میں پائی جاتی ہے ۔یہ وٹامن گرمی اور خشک سالی کے دنوں میں اونٹ کے دودھ میں اور زیادہ بڑھ جاتی ہے ۔صحرا میں چونکہ سبزیاں اور پھل اتنے زیادہ میسر نہیں ہوتے اس لئے اونٹنی کے دودھ کا استعمال وٹامن سی کی کمی کو پورا کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے ۔وٹامن سی قوت مدافعت کو بہتر کرنے میں استعمال ہوتا ہے ۔شدید گرمی کے موسم میں وٹامن سی دھوپ کی حدت اور لولگنے سے بھی بچاتا ہے ۔
اونٹنی کے دودھ میں وٹامن سی 23ملی گرام فی لیٹر تک ہوتا ہے ۔اونٹنی کے دودھ میں مدافعتی عوامل ہونے کی وجہ سے انسان اپنے مدافعتی نظام کو تقو یت پہنچا نے کے لئے روز مرہ باقاعدگی سے استعمال کر سکتا ہے ۔جبکہ اونٹنی کے دودھ میں Antimicrobial Elementsبھی ہوتے ہیں جو انسانی جسم کے لئے فائدہ مند ہوتے ہیں ۔برصغیر کے علاوہ دنیا میں سب سے زیادہ گائے کا دودھ استعمال ہوتا ہے ۔طبی حقائق بتا تے ہیں کہ گائے کہ دودھ کے مقابلے میں کیلشیم کی مقدار اونٹنی کے دودھ میں زیادہ ہوتی ہے ۔چکنائی کی مقدار بھی انتہائی غیر معمولی ہوتی ہے ۔
جوڑوں کے در د اور اوسیٹنو پوروسیس کے مریضوں کو آرام ملتا ہے ۔اونٹنی کے دودھ میں وٹامن ،نمکیات ،پروٹین اور چکنائی کی ایک خاصی مقدار موجود ہوتی ہے ۔ذیابیطس کے مریضوں کے لئے بھی اونٹنی کا دودھ قدرت کی طرف سے ایک انمول عطیہ ہے کیونکہ اس میں انسولین کی خاصی مقدار ہوتی ہے جو گائے کے دودھ کے مقابلے میں کافی زیادہ ہے انسولین ایک ہارمون ہے جو ذیابیطس کے مریضوں میں کم مقدار میں بنتا ہے اور انہیں یہ ہارمون دوائیوں کی شکل میں لینا پڑتا ہے ۔
ذیابیطس کے ان مریضوں میں اونٹنی کا دودھ کا استعمال ایک شافی علاج کے طور پر اکیسر ہے ۔اونٹنی کے دودھ میں پائے جانے والے نیوٹر سیوٹیکل اجزا میں سب سے اہم لیکٹو فیران یر قان کے مریضوں میں جگر کی حالت کو بہتر بنانے کے لئے بہت مفید ہے ۔یرقان اور جگر کے کینسر کی حالت میں اونٹنی کا دودھ جگر کی نشو ونما اور اس کی کار آمد بنانے میں مفید سمجھا جاتاہے ۔اونٹنی کے دودھ میں کو لیسٹرول مناسب مقدار میں پایا جاتا ہے ،جو دل کے امراض میں مبتلا مریضوں کے لئے غذائی متبادل ہے ،اونٹنی کے دودھ میں ٹی بی کا جر ثو مہ نہ ہونے Veterinary and nutritional health utility کے برابر ہے جب کہ گائے اور بھینس کے دودھ میں یہ پایا جاتا ہے ۔
اگر اونٹنی کا دودھ غذائی متبادل کے طور پر استعمال کیا جائے تو ا س سے اس مہلک اور متعدی مرض سے بچا جا سکتا ہے ۔اونٹنی کا دودھ ایک بہترین قبض کشا دوائی کے طور پر بھی استعمال بھی کیا جاتا ہے ۔بعض مہلک امراض میں بھی اونٹنی کے دودھ کے استعمال سے اچھے اثرات نظر آئے مثلاً کینسر ،ایچ آئی وی ایڈز،ائزائمر ،ٹی بی ،پارکنسن ،دل کی بیماریوں ،ڈراپسی ،خون کی کمی اور ہیپا ٹائٹس میں بھی اس کا استعمال مفید ہے ۔500ملٹی لیٹر اونٹنی کا تازہ بغیر ابلا دودھ روزانہ پینے سے ذیابیطس کے مریضوں کی صحت پر اچھا تاثر چھوڑتا ہے کیونکہ اونٹنی کے دودھ میں انسولین لائیک پروٹین ہوتا ہے جو تیزی سے انسانی جسم میں شامل ہونا ہے اور جمتا بھی نہیں ۔
امریکی تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق اس دودھ میں HEALING PROPERTIESکے علاوہ انسولین کی سطح اور اس کی اینٹی بائیوٹک سٹر کچر کے مقابلے میں بہت سادہ ہونے کی وجہ سے فوراً انسانی ٹشوز اور خلیات کی گہرائیوں میں چلاجاتا ہے جس کے معنی یہ ہوئے کہ اونٹنی کے دودھ ہی میں کچھ ایسی خصوصیات ہیں جس سے انسانی صحت اور بیماریوں کے خلاف با اثر قو ت مدافعت پیدا ہو سکتی ہے ۔کیلشیم کی کمی وجہ سے جن لوگوں کی ہڈیاں کمزور ہونے کا مسئلہ ہو ان کو اونٹنی کا دودھ پینے سے افاقہ ہوتا ہے ۔

sourceUrduPoint.

Tags

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
Close