Health Articles

Monsoon Season and Pandemic Diseases

Monsoon Season and Pandemic Diseases What are the common rainy season diseases?.  After the hot weather, a series of strong winds, deep clouds and constant rains is called monsoon. The heat from the Indian Ocean near the equator near the east coast of Africa begins with the formation of vapors, and these vapors take the form of clouds and move east. They arrive in Sri Lanka and South India in the first week of June and then head east.

Some of them escape the Himalayas over India. Part of the clouds move northwest to Pakistan, and from July 15, monsoon clouds arrive in Lahore. About July 15, Saun has its first date in Pakistan. When the weather is pleasant with the rains, the faces of the heat-ridden ones open up, and most of the people go out to enjoy the season with their families. Monsoon Season and Pandemic Diseases. What are the common rainy season diseases?

But where this season brings happiness, many houses are overflowing with torrential rains. Like every year, monsoon has started all over the country this year. Light rains are prevailing in different cities and departments. Meteorology predicted more torrential rains. It is important that in the rainy season, citizens should take measures to protect their lives and property, check drainage on roofs of houses so that no water is collected.

Bathing in rainwater and ponds should never be avoided; children should be kept away from electrical wires and poles. And the ground should avoid touching the electrical wires. Experts say there is a high risk of spreading pandemic diseases during the rainy season. Monsoon-related diseases include topical influenza (malaria), malaria, typhoid, dengue fever, cholera, and hepatitis A.

What are the common rainy season diseases?

Pandemic cold (seasonal influenza) is a common outbreak of monsoon, influenza virus entering the human body through the air and affecting the nose, throat, and lungs. And since the virus is present in the open air for people to move easily from one person to another. Symptoms of the disease include acute pain and fever in runny nose, body, and throat, a good diet should be taken to prevent this infectious disease so that the body’s immune system is strong and that can eliminate the virus. Monsoon Season and Pandemic Diseases.

In addition, cholera is one of the most dangerous diseases in the monsoon season, due to some of the dangerous bacteria that spread due to bad food, sore fruits, wastewater and lack of hygiene. Symptoms include vomiting and vomiting, they cause excessive water loss and muscle spasms from the body, and lack of salt in the human body.

Cholera patients need urgent treatment because the lack of salt in the human body can cause death. The cholesterol patient should be diluted with ORES water, which maintains the balance of water as well as the salts in the body, the use of boiling clean water and hygiene principles to prevent cholera. During the rainy season, there is also the risk of typhoid spread due to bacteria found in contaminated water, which spreads from contaminated food or from an infected person’s waste.

Symptoms for a few days include high fever, severe abdominal pain, headache, and Vomiting is coming.
The most alarming thing about this disease is that it remains in the leaf even after surgical treatment. The disease is diagnosed by a blood test, preventive measures should be taken to use clear water, use of good antibacterial soap and better drainage. In addition, hepatitis A (yellow jaundice) is also one of the most dangerous epidemic diseases that causes infection in the liver. Monsoon Season and Pandemic Diseases.

Bees on fruits and vegetables play an important role in spreading the disease, and for this reason, experts recommend that everything is washed with water. The symptoms of this disease indicate inflammation in the liver. , Including eyes, skin, and urine, gastrointestinal pain, loss of appetite, nausea, fever, and thin patches.
There is no specific cure for this disease, but it is often recommended to drink different drinks. Similarly, one of the diseases spread during the rainy season is malaria, which is caused by mosquitoes born in the rainwater.

Symptoms include high fever, body, and headache, sweating, if not treated in time, can cause liver and kidney problems. Mosquito bites should be used as a precautionary measure and try to avoid wastewater at home. The accumulation of water also increases the risk of dengue fever, dengue mosquitoes are born in clear water. The identity of this mosquito is that it has white and black lines on its body and is usually larger than other mosquitoes and bites in the morning and evening. What are the common rainy season diseases?

Symptoms of dengue fever include severe pain in the joints and muscles, back pain, headache, fever and red marks on the body. In hot climates where rains are a cause of mercy and relief for us, the lack of precautionary measures can also lead to the aforementioned diseases, so for the monsoon season, it is important that the health and hygiene be regulated. Special care should be taken to keep yourself and your home clean, to prevent the spread of infectious diseases and the possible consequences. Monsoon Season and Pandemic Diseases.

گرم موسم کے بعد تیز ہواؤں، گہرے بادلوں اور مسلسل بارشوں کا سلسلہ مون سون کہلاتا ہے ۔ افریکہ کے مشرقی ساحلوں کے قریب خط استوا کے آس پاس بحر ہند کے اوپر گرمی کی وجہ سے بخارات بننے کا عمل شروع ہوتا ہے اور یہ بخارات بادلوں کی شکل اختیار کر لیتے ہیں اور مشرق کا رخ اختیار کرتے ہیں۔ جون کے پہلے ہفتے میں یہ سری لنکا اور جنوبی بھارت پہنچتے ہیں اور پھر مشرق کی طرف نکل جاتے ہیں۔ان کا کچھ حصہ بھارت کے اوپر برستا ہوا کوہ ہمالیہ سے آٹکراتا ہے ۔ بادلوں کا کچھ حصہ شمال مغرب کی طرف پاکستان کا رخ کرتا ہے اور 15 جولائی سے مون سون کے بادل لاہور پہنچتے ہیں۔ تقریباً 15 جولائی کو پاکستان میں ساون کی پہلی تاریخ ہوتی ہے ۔ بارش سے موسم خوشگوار ہونے کے بعد گرمی کے ستائے افراد کے چہرے کھلکھلا اٹھتے ہیں اور اکثر لوگ موسم کا لطف لینے کے لیے اپنے گھروالوں کے ساتھ تفریحی مقامات پر گھومنے چلے جاتے ہیں۔

مگر جہاں یہ موسم خوشیاں لاتا ہے وہیں کئی گھر ان موسلادھار بارشوں سے آنے والے سیلاب میں بہہ جاتے ہیں۔ہر سال کی طرح رواں سال بھی ملک بھر میں مون سون کا آغاز ہوچکا ہے ، مختلف شہروں میں ہلکی کہیں تیز بارشیں جاری ہیں اور محکمہ موسمیات نے مزید طوفانی بارشوں کی پیشگوئی کی ہے ۔ ضروری ہے کہ برسات کے موسم میں شہریوں کو اپنی جان و مال کے تحفظ کے لیے اقدامات کرنا چاہیے ، گھر کی چھتوں پر نکاسی آب کا جائزہ لینا چاہیے تاکہ پانی جمع نہ ہو۔برساتی نالوں اور تالابوں میں نہانا ہر گز نہیں چاہیے ، بچوں کو بجلی کی تاروں اور کھمبوں سے دور رکھنا چاہیے ۔ اور زمین پر گری بجلی کی تاروں کو چھونے سے گریز کرنا چاہیے ۔ ماہرین صحت کے مطابق برسات کے موسم میں بے شمار وبائی امراض پھیلنے کا خدشہ ہوتا ہے۔ مون سون میں پیدا ہونے والی بیماریوں میں سیزنل انفلوائنزا (وبائی زکام)، ملیریا، ٹائیفایڈ، ڈینگی بخار، ہیضہ، اور ہیپاٹائٹس اے What are the common rainy season diseases? سرفہرست ہیں

۔وبائی زکام ( سیزنل انفوائنزا) مون سون کے موسم میں پھیلنے والی عام بیماری ہے ، انفلوائنزا وائرس ہوا کے ذریعے انسانی جسم میں داخل ہوتا ہے اور ناک، گلے اور پھیپڑوں کو متاثر کرتا ہے۔اور چونکہ اس کاوائرس کھلی فضا میں موجود ہوتا ہے اس لئے ایک فرد سے دوسرے میں باآسانی منتقل ہوجاتا ہے۔ اس بیماری کی نشانیوں میں بہتی ہوئی ناک، جسم اور گلے میں شدید درد اور بخار شامل ہیں، اس وبائی مرض سے بچنے کے لئے اچھی غذا لینا چاہیے تاکہ جسم کی قوت مدافعت زیادہ مضبوط ہو اور جو اس وائرس کو ختم کرسکے ۔اس کے علاوہ ہیضہ مون سوں کے موسم میں پھیلنے والی خطرناک بیماریوں میں سے ایک ہے ،ہیضہ کچھ خطرناک بیکٹیریا کی وجہ سے ہوتا ہے جو خراب کھانوں، گلے سڑے پھلوں، گندے پانی اور حفظان صحت کی کمی کے باعث پھیلتے ہیں۔

اس کی علامات میں پیچس اور قے آنا شامل ہے،ان کی وجہ سے جسم سے بہت زیادہ پانی ضائع اور پٹھوں میں کھچاؤ پیدا ہوجاتا ہے، اورانسانی جسم میں نمکیات کی کمی ہوجاتی ہے۔ہیضے کے مریض کو فوری علاج کی ضرورت ہوتی ہے کیونکہ انسانی جسم میں نمکیات کی کمی موت کا سبب بھی بن سکتی ہے۔ ہیضے کے مریض کو اوآرایس پانی میں گھول کر پلانا چاہیے جو جسم میں پانی کے ساتھ ساتھ نمکیات کا توازن برقرار رکھتا ہے،ہیضے سے بچاؤ کے لئے ابال کر صاف پانی کا استعمال اور حفظان صحت کے اصولوں کا خیال رکھناضروری ہے ۔ برسات کے موسم میں آلودہ پانی میں پائے جانے والے بیکٹیریا کی وجہ سے ٹائیفائڈ کے پھیلنے کا بھی خطرہ ہوتاہے جوکہ آلودہ کھانے یا کسی متاثرہ شخص کے فضلے سے پھیلتا ہے ،اسکی علامات کچھ دنوں تک تیز بخار، پیٹ میں شدید درد، سر درد اور قے آنا ہے۔اس بیماری کی سب سے خطرناک بات یہ ہے کہ اسکا جراثیم علاج کے بعد بھی پتے میں رہ جاتا ہے۔

اس بیماری کی تشخیص خون کے ٹیسٹ کے ذریعے کی جاتی ہے،اس مرض سے بچاؤ کے لیے احتیاتی تدابیر میں صاف پانی کا استعمال، اچھے انٹی بیکٹیریا صابن کا استعمال اور بہتر نکاسی آب کا انتظام کرنا چاہیے ۔ اس کے علاوہ ہیپاٹائٹس اے (پیلا یرقان) کا شمار بھی ان خطرناک وبائی بیماریوں میں ہوتا ہے جو جگر میں انفیکشن پیدا کرتی ہیں۔پھلوں اور سبزیوں پر بیٹھنے والی مکھیاں اس بیماری کو پھیلانے میں اہم کردار ادا کرتی ہیں اور اسی وجہ سے ماہرین صحت یہ تلقین کرتے ہیں کہ ہر چیز پانی سے دھو کر استعمال کی جائے ۔اس بیماری کی علامات جگر میں سوزش کی نشان دہی کرتی ہے، اس کے علاوہ آنکھوں، جلد اور پیشاب کا پیلا ہونا ، معدے میں درد، بھوک کا ختم ہونا، متلی ہونا، بخار اور پتلے پیچس آنا شامل ہے۔اس بیماری کا What are the common rainy season diseases? کوئی خاص علاج نہیں کیا جاتا بلکہ اکثر اوقات مختلف مشروبات پینے کی تلقین کی جاتی ہے۔

اسی طرح برسات کے موسم میں پھیلنے والی بیماریوں میں سے ایک ملیریا ہے جو کہ بارش کے کھڑے پانی میں پیدا ہونے والے مچھروں کی وجہ سے پھیلتی ہے۔ اس کی نشانیوں میں تیز بخار، جسم اور سر درد، پسینہ آنا شامل ہیں، اگر اس کا علاج بروقت نہ کیا جائے تو جگر اور گردوں کے مسائل پیدا ہو سکتے ہیں۔ملیریا سے بچاؤ کی احتیاتی تدابیر کے لیے مچھر دانی کا استعمال کرناچاہیے اور کوشش کرنی چاہیے کہ گھر میں گندے پانی کا ذخیرہ نہ ہو۔ پانی جمع ہونے سے ڈینگی بخار پھیلنے کا بھی خطرہ ہوتا ہے، ڈینگی مچھر صاف پانی میں پیدا ہوتاہے۔ اس مچھر کی پہچان یہ ہے کہ اس  کے جسم پر سفید اور کالی لکیریں ہوتی ہیں اور یہ دوسرے مچھروں سے عموماً بڑا ہوتا ہے اور صبح اور شام کے وقت کاٹتا ہے۔

ڈینگی بخار کی نشانیوں میں جوڑوں اور پٹھوں میں شدید درد، آنکھوں کے پیچھے درد، سر درد، بخار اور جسم پر سرخ نشانات بننا شامل ہیں۔ گرم موسم میں بارشیں جہاں ہمارے لیے رحمت اور راحت کا سبب بنتی ہیں وہیں احتیاطی تدابیر اختیار نہ کرنے کی وجہ سے درج بالا بیماریوں کی وجہ بھی بن سکتی ہیں، لہٰذا مون سون کے موسم کو انجوائے کرنے کے لیے ضروری ہے کہ صحت و صفائی کا خاص خیال رکھا جائے ، خود کو اور گھر کو صاف ستھرا رکھاجائے،تاکہ وبائی امراض کے پھیلاؤ اور اس کے نتیجے میں ہونے والے ممکنہ نقصانات سے بچا جاسکے ۔

Monsoon Season and Pandemic Diseases.

Source UrduPoint.

Tags
Show More

Mushahid Hussain

My Name is Mushahid Hussain Alvi I am a Web Designer

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Back to top button
Close
%d bloggers like this: