Health Articles

Hand washing day

Hand washing day

Hand washing day

Make your habit of washing hands
World Cup of hand washing is celebrated October 15 worldwide, aiming to celebrate that day is to inform people about the diseases that can cause birth due to not washing hands. The United Nations General Assembly declared 2008 as a year of sanitation and the world’s hands on hand washing is one of the same.

This year, it is celebrated with the title “Making Your Own Use to Hand.” Its aim is to ban sanitation principles.
Millions of people are affected by bacterial diseases worldwide, including Pakistan. According to the World Health Organization, the annual number of children aged around the world is 20 million.
2.5 million cases per annum in Pakistan occur. Due to the lack of water shortage in the country, one hundred and sixteen and a half thousand children under the age of five years go away.
According to experts, bacteria also play an important role in the spread of many diseases, including digestion, diarrhea, black cough and cannon. At one cent one thousand to 10 thousand bacteria can be gathered.
Bacteria contain only one cell or cell. Bacteria do not harm health but also benefit. However, despite these extreme nutrients, they contain all the things that the body needs. For example, bacterial foods are beneficial to solve body fat. In addition, they have a useful role in the digestive system.
According to experts, well-being with soap reduces the risk of diarrhea by 30 to 50 percent. According to experts, germs often enter the human body while eating food and can cause us to be targeted due to the habit of washing hands, toe and mouth diseases, early infections, hepatitis A, abdominal diseases.

There is a lot of importance in cleaning the Islamic society and it is called half faith, but also an emphasis on cleaning hands with a scientific perspective.
Hand World World Day is celebrated and non-governmental organizations confer on conferences, workshops, and universities. In Islamic institutions, the importance and benefits of washing hands are also handled in Pakistan. Working, Healthy jobs, health, employment, orphanage, are working in other 7 fields of life.
Under this, the country study centers are established, where children are educated and advocated with education. Start centers include training workshops for orphan children, their parents, and guardians, and it will not be absurd. There is also a lot of effort for awareness.
The alarm has been struggling to create consciousness in children over the past several years, and there are various types of appointments organized in this regard, special seats are organized in Madras, Study Centers, Aagosh Homes, which include children’s health. Mental life is arranged, programs organized on the global day of hand washing are arranged for children with no hand-washing, and to wash hands and prevent measures to avoid these diseases.
On this occasion, high-gen kits and children were distributed to the children. The purpose of this whole premise is that children have to create a sense of responsibility to avoid good health and health.

ہاتھ دھونے کو اپنی عادت بنائیے
دنیا بھر میں 15اکتوبرکو ہاتھ دھونے کا عالمی دن منایا جا رہا ہے، اس دن کو منانے کا مقصد لوگوں میں اْن بیماریوں کے بارے میں آگاہی پید اکرنا ہے،جو ہاتھ نہ دھونے کی وجہ سے جنم لے سکتی ہیں۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے 2008ء کو صحت و صفائی (سینیٹیشن) کا سال قرار دیا تھا اور ہاتھ دھونے کا عالمی دن اسی کی ایک کڑی ہے۔

رواں برس یہ د ن یہ دن ”ہاتھ دھونے کو اپنی عادت بنائیے“ کے عنوان کے ساتھ منایا جا رہا ہے۔ اس کا مقصد حفظان صحت کے اصولوں کی پابندی کرنا سکھانا ہے۔
پاکستان سمیت دنیا بھر میں سالانہ، لاکھوں افراد بیکٹریا سے پیدا ہونے والی بیماریوں سے متاثر ہوتے ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کے مطابق دنیا بھر میں اسہال سے مرنے والے بچوں کی سالانہ تعداد 20 لاکھ ہے۔

پاکستان میں اسہال کے سالانہ 2 کروڑ 50 لاکھ کیسز سامنے آتے ہیں۔ ملک میں پانی کی کمی اوردست کے باعث سالانہ پانچ سال سے کم عمر کے ایک لاکھ سولہ ہزار بچے جان سے چلے جاتے ہیں ۔
ماہرین کے مطابق بیکٹیریا متعدد بیماریوں کے پھیلاوٴ میں بھی اہم کردار ادا کرتے ہیں، ان میں خناق، ہیضہ، کالی کھانسی اور تپ دق بھی شامل ہیں۔ایک سینٹی میٹر پر ایک ہزار سے 10 ہزار تک بیکٹیریا جمع ہو سکتے ہیں۔بیکٹریا صرف ایک خلیے یا سیل پر مشتمل ہوتے ہیں۔ بیکٹریا صرف صحت کو نقصان ہی نہیں پہنچاتے بلکہ یہ فائدہ مند بھی ہوتے ہیں۔ تاہم اس انتہائی ننھے سے جسم کے باوجود ان میں وہ سب چیزیں موجود ہوتی ہیں، جس کی جسم کو ضرورت ہوتی ہے۔ مثال کے طور بیکٹیریا کھانے کے ساتھ بدن میں جانے والی چربی کو حل کرنے میں فائدہ مند ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ ہاضمے میں بھی ان کا مفید کردار ہے۔ماہرین کے مطابق صابن کے ساتھ اچھی طرح ہاتھ دھونے سے اسہال کا خطرہ 30سے 50فیصد تک کم ہو جاتا ہے۔ ماہرین کے مطابق جراثیم زیادہ تر کھانے پینے کے دوران انسانی جسم میں داخل ہوتے ہیں اورہاتھ، پیر اور منہ کے امراض ،جلدی انفیکشن،ہیپاٹائٹس اے، پیٹ کے امراض بھی ہاتھ نہ دھونے کی عادت کی وجہ سے ہمیں نشانہ بنا سکتے ہیں۔

اسلامی معاشرے میں صفائی کی بہت اہمیت ہے اور اسے نصف ایمان کہا جاتا ہے بلکہ سائنسی نقطہ نظر سے بھی ہاتھوں کی صفائی پر بہت زور دیا گیا ہے ۔دنیا بھر میں ہاتھ دھو نے کا عالمی دن منایا جاتا ہے اوراس حوالے سے غیر سرکاری تنظیمیں کانفرنسز ،ورکشاپس اورلیکچر زمنعقد کرتی ہیں ۔تعلیمی اداروں میں بھی ہاتھ دھونے کی اہمیت اور فوائد سے متعلق آگاہ کیا جاتا ہے ۔پاکستان میں اس سلسلے میں الخدمت بھرپورکام کر رہی ہے ،الخدمت تعلیم ،صحت ،روزگار،کفالت یتامی ٰ سمیت زندگی کے دیگر 7شعبہ جات میں کام کررہی ہے ۔اس کے تحت ملک اسٹڈی سینٹرز،مدارس قائم ہیں جہاں بچوں کو تعلیم کے ساتھ ان کی اخلاق اورکردارسازی کی جاتی ہے ۔اسٹڈی سینٹرز میں یتیم بچوں ،ان کی ماوٴں اور سرپرستوں کیلئے تربیتی ورکشاپس کی جاتی ہیں اور یوں کہیں تو بے جا نہیں ہوگا کہ الخدمت شعورآگہی کیلئے بھی بھرپورکام کررہی ہے ۔
الخدمت گزشتہ کئی برسوں سے ہینڈ واشنگ ڈے پر بچوں میں شعورآگہی پیدا کرنے کی جدوجہد کر رہی ہے،اس سلسلے میں مختلف تقاریب کا اہتمام کیا جاتا ہے ،مدارس،اسٹڈی سینٹرز،آغوش ہومز میں خصوصی نشستیں منعقد کی جاتی ہیں جن میں بچوں کو صحت مند زندگی سے متعلق آگہی دی جاتی ہے ،ہاتھ دھونے کے عالمی دن پر منعقد ہونے والے پروگرامز میں بچوں کو ہاتھ نہ دھونے سے پیدا ہونے والے امراض سے متعلق آگہی دی جاتی ہے اوران امراض سے بچنے کیلئے ہاتھ دھونے اوراحتیاطی تدابیر بتائی جاتی ہیں ْ۔اس موموقع پر بچوں کو ہائی جین کٹس اورسوپ تقسیم کیے گئے۔اس پورے وعل کا مقصد یہ ہے کہ بچوں کو اچھی صحت اوربیماریوں سے بچنے کیلئے احساس ذمہ داری پیدا کرنا ہے ۔

source UrduPoint.

Tags
Show More

Mushahid Hussain

My Name is Mushahid Hussain Alvi I am a Web Designer

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

Back to top button
Close
%d bloggers like this: